Categories
صحت

خربوزہ اور گرما کھانے کے چند ایسے فائدے جو آپ کو حیران کردیں گے

اللہ تعالی نے انسان کو دنیا میں کئی طرح کی نعمتیں عطا کی ہیں ۔جن میں سبزیاں اور پھل بھی شامل ہیں۔ان پھلوں میں ایک پھل گرما بھی ہے ۔ وسط موسم گرما میں خشک پہاڑوں اور ریگستانی زمین کا یہ پھل ہر علاقے میں دوکانوں، ریڑھیوں اور ٹھیلوں پر دیکھنے کو ملتا ہے۔ اس کے چھلکے سے لے کر بیج تک سب کچھ غذائی اور شفائی اثرات کا خزانہ ہیں۔گرمے کا مزاج گرم اور تر ہے۔

دنیا میں خربوزے کی متعدد اقسام پائی جاتی ہیں۔جن میں گرما، خربوزہ اور سردا زیادہ پسند کیے جانے والی اقسام ہیں۔ گرما ریتلی زمین پر اگنے والا گرمیوں کا بہترین پھل ہے۔اس کا وزن ایک کلوگرام سے لے کر پانچ کلوگرام تک ہوتا ہے۔ اس کا گودا نرم، رسیلہ اور سفید رنگ کا ہوتا ہے۔ گرمے کے درمیان میں بیج موجود ہوتے ہیں۔ تمام معلومات سائنس کی تحقیقات کے نتائج کے مطابق ہیں اور ان میں غذائی فوک کہانیوں کو شامل نہیں کیا گیا تاکہ آپ اس پھل کی اصل حقیقت سے آشنا ہوں اور اسے اپنی روزانہ کی خوراک میں شامل کریں ۔ اس کے علاوہ خربوزے میں وافر مقدار میں وٹامن سی،B9، B6اور B1پائے جاتے ہیں۔ اس میں پوٹاشیم، فاسفورس، میگنیشیم، سوڈیم، کیلشیم، آئرن اور زنک جیسے معدنیات بھی وافر مقدار میں پائے جاتے ہیں۔

گرما اور خربوزہ کھانے سے ملنے والے فوائد مندرجہ ذیل ہیں گرما میں وافر مقدار میں فلیوونائڈز پایا جاتا ہے۔ فلیوونائڈز جسم کے سیلز کو فری ریڈیکلز کے حملے سے بچاتا ہے اور یہ فری ریڈیکلز جسم کو اعضا کو انتہائی متاثر کر سکتے ہیں، اس کے علاوہ یہ چھاتی،بڑی آنت اور پینکریاز کے کینسر سے بھی محفوظ رکھتا ہے۔ گرمامیں پایا جانے والا بیٹا کیروٹین بینائی کو بہتر بناتا ہے اور بوڑھے لوگوں میں بینائی کم ہوجانے کے امکانات کو کم کرتا ہے یہ آنکھ کی رتینا کو سُورج کی خطرناک شعاؤں سے بچانے کا باعث بنتا ہے اور عُمر کے بڑھنے کے ساتھ نظر پر پڑنے والے اثرات کو کم کرتا ہے۔ گرمیوں کا یہ صحت افزاء پھل پوٹاشیم سے بھرپور ہوتا ہے جو دل کی دھرکن اور بلڈپریشر کو کنٹرول کر کے دل کی بہت سی بیماریوں سے محفوظ رکھتا ہے۔ اس کے علاوہ اس میں پایا جانے والے ایڈینوسین اور لائکوپین دل کے دورے سے محفوظ رکھتے ہیں، ڈاکٹر حضرات کا کہنا ہے کہ بلڈ پریشر اور دل کے مریضوں کے لیے پوٹاشیم سے بھر پُور کھانے کسی اکسیر سے کم نہیں۔

گرما میں وافر مقدار میں وٹامن سی اور میگانیز موجود ہوتے ہیں۔ جو انفیکشن ، وائرس اور بیکٹیریا سے ہونے والی بیماریوں سے محفوظ رکھتے ہیں اور خاص طور یہ وٹامنز ہمارے نظام مدافعت کو مضبوط بناتے ہیں اور ہمیں موسمی بیماریوں سے بچانے میں انتہائی اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ گرما میں چربی، کولیسٹرول اور کیلوریز نہ ہونے کے برابر ہوتی ہیں۔ اس کے علاوہ اس میں 90 فیصد سے زیادہ پانی موجود ہوتا ہے ۔ اس لئے گرما وزن کم کرنے میں مفید ثابت ہوتا ہے۔ گرما گردوں کو جسم میں سے ٹاکسن کو خارج کرنے میں مدد دیتا ہے ۔ جو گردوں میں پتھری بننے کے عمل کو روکتے ہیں۔اس کے علاوہ گرما میں وافر مقدار میں پانی ہونے کے سبب گردوں کی صفائی ہوتی ہے جس سے گردوں کی صحت بہتر ہوتی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔