Categories
صحت

سلاد کھانے سے انسان کا موڈ بہتر ہوجاتا ہے، تحقیق

سلاد بہترین طبی خزانہ ہے لیکن اپنے ذائقے کی وجہ سے لوگ اسے نظرانداز کر دیتے ہیں، ماہرین کے مطابق سلاد میں اہم معدنیات، وٹامن اور پولی فینول دماغ پر فوری اور بہتر اثر کرتے ہیں، یہی وجہ ہے کہ سلاد کے استعمال سے جہاں صحت اچھی ہوتی ہے وہیں انسان کا موڈ بھی بہتر ہوتا ہے۔ کئی تحقیقات سے بھی یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ سلاد کھانے سے موڈ بہتر ہوتا ہے، سب سے پہلے 2021 میں 15 سے 45 سال کے افراد پر کی گئی تحقیق سے پتا چلا کہ سبزیاں اور پھل کھانے سے صحت بہتر ہوتی ہے

اور موڈ پر اچھا اثر ہوتا ہے۔ یہ تحقیق امریکا اور فرانس سمیت آٹھ ممالک میں کی گئی تھی جس سے معلوم ہوا کہ سلاد سے ڈپریشن بھی کم ہوتا ہے اور موڈ خوشگوار ہوتا ہے۔ اس کے بعد حال ہی میں آسٹریلیا میں 15 سال سے زائد عمر کے 12 ہزار افراد پر ایک طویل سروے کیا گیا۔ اس تحقیقی سروے سے معلوم ہوا کہ سبزیاں، پھل اور سلاد کھانے سے موڈ بہتر ہوتا ہے۔ ماہرین نے کہا ہے کہ سبزیاں اور سلاد ایک طرح سے آپ کے جسم میں زبردست سرمایہ کاری کی حیثیت رکھتے ہیں اور وہ آپ کی دماغی کیفیات کو بھی بہتر بناتے ہیں۔ امریکی جامعہ میں اس ضمن میں ایک چھوٹا تجربہ کیا گیا جس میں 100 طلبا و طالبات شامل تھے، ان سے کہا گیا کہ وہ روزانہ فاسٹ فوڈ، چاکلیٹ کا ڈونٹ وغیرہ کھانے کی بجائے، کوئی پھل، سلاد یا سبزی کھائیں۔ اس تجربے میں شامل افراد نے بتایا کہ اگلے دس دن میں ان میں بے چینی اور ڈپریشن میں نمایاں کمی ہوئی اور وہ خوشی محسوس کررہے تھے۔ اس سے یہ ثابت ہوا کہ کچی سبزیاں یا پھر کسی بھی قسم کی سلاد کھانے سے صحت بہتر ہوتی ہے انسان موٹاپے سے بچتا ہے اور ڈپریشن میں بھی کمی آتی ہے جس کی وجہ سے وہ خود کو خوش محسوس کرتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔