Categories
صحت

آم ضرورت سے زیادہ کھانے کے 10 اہم نقصانات کیا ہیں ؟ جانیں

آم کا موسم آرہا ہے ہر ایک کے لئے خوشی کی بات ہے کیونکہ آم وہ واحد پھل ہے جو آسانی سے حاصل کیا جا سکتا ہے یہاں تک کہ بازار میں بھی اس کی قیمت کچھ عرصے میں سستی ہو جاتی ہے جس سے ہر عام وخاص انسان اسے کھاسکتا ہے لہذا بہت سے لوگ روزانہ اس میٹھے پھل کا استعمال کرسکتے ہیں کسی وجہ سے آم کو “پھلوں کا بادشاہ” بھی کہاجاتا ہے

جب کوئی اکثر آم کو زیادہ کھانے لگ جاتا ہے تو امکان ہے کہ اس کے منفی اثرات بھی ہوں گے جیسا کہ ہم سب جانتے ہیں کہ کسی بھی چیز کا بہت زیادہ استعمال ہماری صحت کے لئے بہت اچھا ثابت نہیں ہوتا ہے آم پھلوں کا بادشاہ ہے آم کو مختلف شکلوں میں میٹھے کے طور پر پکایا جاتا ہے جبکہ کچا آم چٹنی اچار کی شکل میں یا ذائقہ دار کھٹے اور میٹھے کے طور پر کھایا جاتا ہے آپ کو اس کو ضرورت سے زیادہ مقدار میں استعمال کرنے میں احتیاط کرنی چاہئے کیونکہ بہت زیادہ اس کو کھانے سے آپ کو صحت کے کچھ مسائل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے لیکن اگر آپ مناسب مقدار میں استعمال کرتے ہیں تو یہ آپ کی صحت کے لئے بہت فائدہ مند ہے
ضرورت سے زیادہ آم کھانے کے نقصانات کیا ہیں؟
آم وٹامن سی کا بہترین ذریعہ ہے جس سے قوت مدافعت کو بڑھانے میں مدد ملتی ہے جس کی جسم کو ضرورت ہوتی ہے اس کے علاوہ یہ کولیسٹرول کے توازن کو برقرار رکھتا ہے مردانہ زرخیزی میں اضافہ کرتا ہے لیکن اگر ضرورت سے زیادہ مقدار میں اسے استعمال کیا جائے تو آم آپ کی صحت کی حالت کو متاثر کر سکتا ہے یہاں تک کہ خوفناک حد تک برا اثر بھی ڈال سکتا ہے یہاں ہم دیکھتے ہیں کہ اس کا ضرورت سے زیادہ استعمال کرنے کے کیا اثرات ہوتے ہیں شاید یہ ہم سب کے لئے قیمتی معلومات ہو

کیا آم کھانے سے وزن میں اضافہ ہوتا ہے؟
یہ وٹامن سی کا ذریعہ ہونے کے علاوہ بہت سی کیلوری کو بھی جسم میں اکھٹا کرتا ہے درمیانے سائز کے آموں میں تقریبا 135 کیلوری ہوتی ہے یہ آپ میں سے ان لوگوں کے لئے یہ مسئلہ ہوگا جو وزن کم کرنا چاہتے ہیں یہ سچ ہے کہ اس میں قدرتی شکر زیادہ ہوتی ہے جس میں تقریبا31 گرام فی آم ہوتا ہے یہ کیلوری سے لدے ہوئے ہوتے ہیں ہم یہاں آم کے ضرورت سے زیادہ کھانے کے بارے میں بات کر رہے ہیں جس کے نتیجے میں اکثر وزن میں اضافہ ہوتا ہے یہ چینی کا ایک بھرپور ذریعہ ہونے کی وجہ سے یہ وزن میں کمی کرنے والے لوگوں کے لئے برا ہے اگر آپ اپنی کمر کے سائز کو برقرار رکھنے کے خواہشمند ہیں تو آم اعتدال میں کھائیں یا اسے کھانے سے گریز کریں

کیا آم بلڈ شوگر میں اضافہ کرتا ہے؟
کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ اگر آپ بہت زیادہ یہ کھاتے ہیں تو کیا ہوتا ہے؟ بظاہر یہ پھل آپ کے خون میں شکر کی سطح میں اضافہ کر سکتا ہے یہ ایک ایسا پھل ہے جس میں فرکٹوز کی مقدار زیادہ ہوتی ہے جتنا زیادہ آپ اسے کھائیں فرکٹوز کی مقدار اتنی ہی زیادہ ہوتی ہےآم
یہ شوگر کے مریض کے لئے بری خبر ہے اس کا زیادہ مقدار میں استعمال خون میں شکر کے اضافے کا سبب بنے گا اور انسولین کی مقدار میں اضافہ ہوگا یہ یقینی طور پر صحت کے لئے بہت خوفناک ہے کیونکہ یہ بلڈ شوگر کی بیماری میں مبتلا ہونے کا خطرہ ہے
کیا مصنوعی طور پر پکے ہوئے آم نقصان پہنچاتے ہیں؟
کیا آپ جانتے ہیں کہ اب بہت سے تاجر اس کے پکنے کے عمل کو تیز کرنے کے لئے کیلشیم کاربائیڈ کا استعمال کرتے ہیں یہ مادہ صحت کو منفی اثرات دیتا ہے اور صحت کے کئی مسائل پیدا کرتا ہے اس میں آپ محسوس کریں گے جیسے جھنجھناہٹ بے حسی اور پیریفیرل نیوروپیتھی شامل ہے آپ ایسی غذائیں کھانے سے گریز کریں جو کاربائیڈز کے ساتھ پھٹ جاتی ہیں ان میں یہ بھی شامل ہیں

کیا آم ہاضمے کو خراب کرتا ہے ؟
اگر آپ بہت زیادہ یہ کھاتے ہیں تو خوفناک اثرات بدہضمی کا باعث بن سکتے ہیں خاص طور پر اگر آپ کچا کھا رہے ہیں تو کچے بڑی مقدار میں کھانے سے گریز کریں کیونکہ یہ آپ کے نظام ہضم کو بری طرح متاثر کرسکتا ہے
یہ آم کا منہ کیا ہے؟
یہ کچھ لوگوں کے لئے اس کا کچا استعمال آپ کے منہ پہ برا اثر ڈالتا ہے اس مسئلے کو “آم کا منہ” کہا جاتا ہے جب یہ کچا اس کے گوند کے ساتھ کھایا جاتا ہے تو اکثر آپ کو منہ کے ارد گرد زخم خارش چھالے پڑ جاتے ہیں یہ علامت ان لوگوں میں ہوتی ہے جو بہت حساس ہوتے ہیں اگر آپ یہ کچےکھاتے ہیں تو زیادہ محتاط رہنا چاہئے تاکہ “آم کا منہ” نامی مسئلہ پیدا نہ ہوسکےآم
کیا یہ جلن کا سبب بنتے ہیں؟
ان کا زیادہ استعمال ایک اور خوفناک اثر ہوسکتا ہے وہ غذائی نالی کی جلن ہے اگر آپ کچے استعمال کرتے ہیں تو عام طور پر اس کا رس منہ کے ذائقے کو بہتر بناتا ہے کھٹا میٹھا سا ذائقہ مزیدار لگتاہے مگر یہ آپ کی غذائی نالی میں شدید جلن کا سبب بن سکتا ہے

کیا آم کی زیادہ مقدار ڈائریا کا سبب بن سکتی ہے؟
آم زیادہ مقدار میں کھانے سے ڈائریا ہوسکتا ہے اسے اعتدال میں رہ کر کم مقدار میں کھانا ہمیشہ بہتر ہوگا اس کی تاثیر بہت گرم ہوتی ہے اور ریشے دار پھلوں کا زیادہ استعمال ڈائریا کے مسائل کا سبب بن سکتا ہے
گٹھیا سے متاثرہ افراد کو آم نہیں کھانے چاہیئے
جو لوگ سینوسیٹس میں مبتلا ہیں گٹھیا کی بیماری کا شکار افراد کو اس کو بڑی مقدار میں استعمال نہیں کرنا چاہئے یہ تازہ ہو پکا ہوا یا آم کا رس ان کے لئے جھنجھلاہٹ کا سبب بن سکتا ہےآم
کیا آم الرجی کا سبب بھی بن سکتا ہے ؟
اس میں یوریشیول نامی کیمیکل ہوتا ہے جو لوگ اس کیمیکل کے بارے میں حساس ہیں وہ ڈرماٹائٹس سے ضرور رابطہ کریں یہ جلد کا مسئلہ ہے جہاں لوگوں کی جلد میں سوزش ہوتی ہے جو فلکی چھالے دار اور خارش کا شکار ہوسکتی ہے

یہ پھل کچھ لوگوں سے الرجی کا سبب بن سکتا ہے جس میں پانی والی آنکھوں ناک بہنے سانس لینے کے مسائل چھینکنے پیٹ میں درد وغیرہ کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے اگر آپ کو ان علامات میں سے کسی کا سامنا ہے تو آپ کو کچھ دنوں کے لئے اس کا استعمال بند کرنا چاہیئے اور دیکھیں کہ آپ کی صحت میں کوئی تبدیلی آئی ہے اگر نہیں تو فوری ڈاکٹر سے رجوع کریں
کیا آم سے بخار یا ارٹیکیریا بھی ہوسکتا ہے ؟
یہ بخار یا ارٹیکیریا کا سبب بھی بن سکتا ہے چھتے یا ارٹیکیریا جلد کی بیماری ہوتی ہے جو جلد کے دانے کھجلی اور جلد کی لالی کا سبب بنتی ہے یہ بیماری کچھ غذاؤں تناؤ یا ادویات کی وجہ سے بھی شروع ہوسکتا ہے اگر آپ بہت زیادہ آم کھاتے ہیں تو یہ کچھ آپ کی صحت پہ خوفناک اثرات مرتب کرسکتے ہیں صحت کے فوائد حاصل کرنے کے لئے آپ کو اس کا استعمال کرنے میں محتاط رہنا چاہئے غلط طریقہ آپ کو بیماری میں مبتلہ کرسکتا ہے طبیعت کی خرابی کی صورت میں فوری ڈاکٹر سے رجوع کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔