Categories
صحت

ڈپریشن سے محفوظ رہناہےتویہ عمل کریں

اس بات میں کوئی شبہ نہیں کہ جسمانی ورزش کے متعدد طبی فوائد ہیں مگر حالیہ ایک ریسرچ سے معلوم ہوا کہ پیدل چلنے والے لوگوں میں ڈپریشن کی سطح کم ہوتی ہے۔چہل قدمی یا تیزی سے پیدل چلنے کو موٹاپے سے تحفظ کا آلہٰ بھی سمجھا جاتا ہے جبکہ اس سے ذیابیطس سمیت دوسری بیماریوں کے خطرات بھی کم ہوتے ہیں۔

لیکن حال ہی میں کی جانے والی ایک ریسرچ سے معلوم ہوا ہے کہ جو لوگ یومیہ بنیادوں پر چہل قدمی کرتے ہیں، ان میں دوسرے افراد کے مقابلے ڈپریشن کالیول کم ہوتا ہے۔طبی جریدے "جاما نیٹ ورک” میں شائع تازہ ریسرچ سے معلوم ہوا کہ جسمانی سرگرمیاں جہاں دوسری بیماریوں سے محفوظ رکھتی ہیں، وہیں اس سے مینٹل ہیلتھ پر بھی اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ ریسرچ میں بتایا گیا کہ ماہرین نے 15 مختلف سٹڈیز کے مواد کا جائزہ لیا، جس میں 20 لاکھ افراد کی ہیلتھ، ورزش اور انکی روز مرہ کی زندگی کی انفارمیشن کا جائزہ لیا گیا۔ماہرین نے دیکھا کہ جو لوگ یومیہ بنیادوں پر واک کرتے رہے ہیں، ان میں ڈپریشن کالیول ان افراد سے کم تھا جو پیدل نہیں چلتے تھے۔مواد سے معلوم ہوا کہ ہفتے میں 75 منٹ تک چہل قدمی کرنیوالے افراد میں پیدل نہ چلنے والے افراد کے مقابلے ڈپریشن کالیول 18 فیصد کم پایاگیا۔

ایسےہی جولوگ ہفتے میں ڈھائی گھنٹے یا 150 منٹ تک واک کرتے ہیں، ان میں چہل قدمی نہ کرنے والے افراد کے مقابلے 25 فی صد کم ڈپریشن اور ذہنی مسائل کالیول پایاگیا۔رپورٹ میں کہا گیا کہ چہل قدمی کرنے والے افراد میں اور بھی متعدد طرح کے طبی فوائد محسوس کیے گئے۔سائنس دانوں نے تجویز دی ہے کہ ہر بالغ شخص کو ہفتے میں 75 منٹ تک چہل قدمی کرنی چاہیے اور ماہرین صحت بھی لوگوں کو پیدل چلنے کی طرف راغب کریں تو لوگ متعدد بیماریوں سے محفوظ رہ سکتےہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔