Categories
News

پولیس کا دعا زہرہ کے حوالے سے چلائی گئی ویڈیو کے غلط ہونے کا اعتراف، ایس ایچ او معطل

کراچی(این این آئی) کراچی سے اغوا ہونے والی 14سالہ لڑکی دعا زہرہ کی غلط سی سی ٹی وی ویڈیو چلانے پر ایس ایچ او الفلاح بدر شکیل کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔پولیس کے مطابق دعا کی بازیابی کے لیے پولیس کی تفتیش جاری ہے جبکہ تفتیشی رپورٹ تیار

کرلی گئی ہےاعلی افسران کے حکم پر ایس ایچ او الفلاح بدر شکیل کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے، پولیس نے اعتراف کیا کہ جس لڑکی کی سی سی ٹی وی چلائی گئی وہ دعا نہیں، تفتیش کرنے پر تصدیق ہوئی کہ وہ دعا نہیں کوئی اور ہے۔پولیس نے میڈیا سے مذکورہ سی سی ٹی وی وڈیو دوبارہ نشر نہ کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ اس ویڈیو کا دعا زہرہ کیس سے کوئی تعلق نہیں۔پولیس حکام نے بتایا کہ دعا کی بازیابی کیلئے کوششیں جاری ہیں۔اس سے قبل پولیس رپورٹ اور بچی کے اہلخانہ کے بیانات میں تضادات سامنے آئے تھے، پولیس کے مطابق لاپتہ بچی کیوالد نے بتایا کہ دعا ساتویں جماعت کی طالبہ ہے، اسکول انتظامیہ کے مطابق بچی تیسری جماعت تک اسکول آتی تھی، تیسری جماعت تک بچی کیاسکول آنے کی تصدیق کلاس فیلوز نے بھی کی۔پولیس کے مطابق انٹرنیٹ سرچ ہسٹری میں کورٹ میرج اور نکاح کی معلومات سامنے آئی ہیں، دعا زہرہ اپنا ٹیبلٹ بھی ساتھ لے گئی ہے۔پولیس کی اس رپورٹ کے حوالے سے اہلِ خانہ نے غلط ہونے کا دعوی کیا ، اہلخانہ نے مطالبہ کیا تھا کہ غلط رپورٹ پر ایس ایچ اوالفلاح کے خلاف کارروائی کی جائے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔