Categories
Uncategorized

محمد عامر سمیت کراچی کنگز کے تین اور کھیلاڑی پی ایس ایل 2022 سے باہر!!

پاکستان سپر لیگ نے ایک تہائی مکمل کر لی۔ ملتان سلطانز اس وقت بہترین ٹیم لگ رہی ہے، وہ واقعی اچھا کھیل رہی ہے اور بیک ٹو بیک میچ جیت رہی ہے۔ ان کے کھیل کا معیار بہت بلند ہے۔ وہ پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے میچ جیت رہے ہیں اور پہلے بولنگ بھی کر رہے ہیں۔

سلطانوں نے کبھی ٹاس پر بھروسہ نہیں کیا کیونکہ ان کے کپتان محمد رضوان نے کہا کہ ٹاس ان کے ہاتھ میں نہیں ہے جو صرف قسمت کی بات ہے۔ ہر ٹیم کو پیشہ ورانہ طور پر کھیلنا ہوگا کیونکہ وہ پیشہ ور کرکٹرز ہیں۔

دوسری جانب کراچی کنگز اس وقت سب سے زیادہ جدوجہد کرنے والی ٹیم ہے۔ کنگز کو تین میں سے تین میچوں میں شکست ہوئی ہے۔ وہاں مڈل آرڈر ٹھیک نہیں ہو رہا۔ ان کی باؤلنگ بھی اچھی نہیں ہے۔

آئیے دیکھتے ہیں کراچی کنگز کے میچز کے نتائج

کراچی کنگز کا مقابلہ ملتان سلطانز سے۔

گزشتہ جمعرات کو پاکستان سپر لیگ کے پہلے میچ میں کنگز کا مقابلہ سلطانز سے تھا۔ سلطانز نے ٹاس جیت کر کنگز کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔ کراچی اچھی شروعات کرنے میں کامیاب رہا لیکن بابر اعظم اور شرجیل خان کے آؤٹ ہونے کے بعد ان کی وکٹیں گرتی رہیں۔

ان سب کے باوجود ان کی آدھی وکٹیں ہاتھ میں تھیں لیکن پھر بھی 150 پلس اسکور نہیں کر سکے۔ ان کی بیٹنگ واقعی خراب تھی اور بابر اعظم نے بھی بہت سی گیندیں ضائع کیں۔

ملتان سلطانز جن کے پاس اتنی عمدہ بیٹنگ لائن اپ ہے وہ اس قسم کے چھوٹے اسکور کا تعاقب کرنے میں کبھی ناکام نہیں ہوں گے جب تک کہ بولنگ غیر معمولی نہ ہو۔ چنانچہ توقع کے مطابق سلطانز نے ٹورنامنٹ کا پہلا میچ آسانی سے جیت لیا۔

کراچی کنگز بمقابلہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز

ٹاس سے ایک اور بری آؤٹ شروع ہوتی ہے۔ کراچی کنگز نے ایک بار پھر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے خلاف ٹاس ہار کر پہلے بیٹنگ کی۔ ہم نے سوچا کہ وہ کچھ بہتری لائیں گے لیکن انہوں نے کسی قسم کی بہتری نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

کراچی کنگز نے شروع ہی سے وکٹیں گنوائیں، وہ صرف 50 رنز میں آدھی وکٹیں گنوا بیٹھی اور بری طرح مشکلات کا شکار تھی۔ بابر اعظم نے بہتر اننگز کھیلی، تیس کی دہائی میں آؤٹ ہوئے، جس سے کنگز کو بھی نقصان پہنچا کیونکہ یہ واقعی سست اننگز تھی۔

ان کے ٹیل اینڈرز نے انہیں 100 پلس کے ہدف تک پہنچا دیا دوسری صورت میں صورتحال ایسا لگتا ہے کہ وہ 10 بھی حاصل نہیں کر پائیں گے۔

کوئٹہ نے ایک بار پھر کھلاڑیوں کو آگاہ کیا تھا اور زلمی کے خلاف پہلے میچ میں ان کی بیٹنگ نے آگ لگائی تھی۔ گلیڈی ایٹرز نے آسانی سے ٹوٹل کا تعاقب کیا اور اپنے رن ریٹ میں بھی اضافہ کیا۔ کنگز کے خلاف اس آسان فتح کے بعد ان کا ریٹ رن ریٹ واقعی بہتر ہوا تھا۔

کراچی کنگز بمقابلہ لاہور قلندرز

پاکستان سپر لیگ میں یہ وہ میچ تھا جس کا سب کو انتظار تھا، جی ہاں کنگز اس سال ٹورنامنٹ میں پہلی بار قلندرز کے خلاف تھیں۔

لاہور قلندرز نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا جس کی توقع تھی۔ انہیں ایک معقول آغاز ملا لیکن دوبارہ سرمایہ کاری کے قابل نہیں رہے۔

شجریل خان نے پلیٹ فارم بنایا لیکن کسی نے اسے جاری نہیں رکھا۔ جوش و خروش مسلسل گرتا رہا اور جہاں کراچی کو 180 کے لگ بھگ مل سکتا تھا وہ 170 بھی نہیں ملا۔

قلندرز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد میچ جیت لیا۔ میچ آخری اوور تک چلا۔ فخر زمان نے شاندار اننگز کھیلی اور سنچری اسکور کی۔

کراچی کنگز کے 3 کھلاڑی آؤٹ۔

جیسا کہ کراچی ٹورنامنٹ میں جدوجہد کر رہا ہے، ایسا لگتا ہے کہ یہ جلد ہی رکنے والا نہیں ہے۔ تازہ ترین اطلاعات کے مطابق کراچی کنگز کے تین کھلاڑی زخمی ہو گئے ہیں اور پاکستان سپر لیگ کے باقی میچ نہیں کھیل سکیں گے۔

محمد الیاس، محمد عامر اور جو کلارک ان کھلاڑیوں میں شامل ہیں جو شاید پورا ٹورنامنٹ نہ کھیل سکیں۔ محمد عامر کی انجری اور باقی ٹورنامنٹ نہ کھیلنے کی تصدیق ہو گئی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔