Categories
Uncategorized

لاہور قلندر کی ٹیم نے دنیا کے لیے مثال قائم کردی! جانیے ایسا کیا کیا!

لاہور قلندرز اور پشاور زلمی کے میچ کے حوالے سے ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے۔ ہم اگلے مضمون میں LAH بمقابلہ PES میچ کے خلاصے کے ساتھ ویڈیو کے بارے میں بتائیں گے۔

HBL پاکستان سپر لیگ سیزن 7 کے 9ویں میچ میں 2 فروری کو لاہور قلندرز اور پشاور زلمی کا مقابلہ ہوا۔

لاہور قلندرز ٹاس ہارنے کے باوجود لاہور قلندرز نے میچ جیت لیا۔ پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر پہلے بولنگ کا فیصلہ کیا۔ لاہور قلندرز نے اپنی ٹیم میں 4 تبدیلیاں کی ہیں۔

حضرت اللہ زازئی اور کامران اکمل نے COVID-19 میں مثبت آنے کے بعد پشاور زلمی میں واپسی کی۔ وہ اپنی الیون میں سلمان ارشاد اور عرش علی خان کو بھی لائے تھے۔ لاہور قلندرز نے بھی 2 تبدیلیاں کی ہیں۔ وہ بین ڈنک سے باہر ہو گئے اور ڈین فاکس کرافٹ کو اپنی پلیئنگ الیون میں منتخب کیا۔

لاہور قلندرز کی بیٹنگ
لاہور قلندرز کا آغاز شاندار رہا۔ انہوں نے عمدہ اوپننگ پارٹنرشپ حاصل کی اور ایک بار پھر فخر زمان نے قلندر کی اننگز کو آگے بڑھایا۔ فخر زمان نے 3 بیک ٹو بیک ففٹی اسکور کیں۔ اس سے قبل انہوں نے روایتی حریف کراچی کنگز کے خلاف بھی شاندار سنچری اسکور کی تھی۔ فخر نے ملتان سلطانز کے خلاف 50، کراچی کنگز کے خلاف 100 اور پشاور زلمی کے خلاف کل 50 رنز بنائے۔

فخر زمان نے 38 گیندوں پر 66 رنز بنائے۔ انہوں نے 173 کے اسٹرائیک ریٹ کے ساتھ کھیلا اور 6 چوکے اور 3 چھکے لگائے۔ عبداللہ شفیق نے بھی عمدہ اننگز کھیلی اور دوسری جانب سے فخر کا ساتھ دیا۔ عبداللہ نے 31 گیندوں پر 41 رنز بنائے۔ وہ صرف 9 رنز سے اپنی ففٹی سے محروم رہے۔

راشد خان کا شاندار شاٹ
راشد خان نے اپنی اننگز کو تیزی کے ساتھ ختم کیا! انہوں نے شاندار چھکے لگائے۔ انہوں نے ایک فلک شاٹ کھیلا جس کی دنیا اور مداحوں نے تعریف کی۔ ان کا فلک شاٹ سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے۔ یہ شاٹ سابق بھارتی کپتان ایم ایس دھونی نے ایجاد کیا تھا۔ اس سے قبل راشد خان کو بھی سیشن میں اس شاٹ کی مشق کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔ اس نے گردش کرنے والی ایک ویڈیو میں بالکل وہی شاٹ کھیلا۔

لاہور قلندرز نے مقررہ 20 اوورز میں 4 وکٹوں کے نقصان پر 199 رنز بنائے۔ پشاور زلمی کی جانب سے کوئی بھی باؤلر اچھی باؤلنگ نہ کر سکا۔

پشاور زلمی کی بیٹنگ
پشاور زلمی نے اننگز کے آغاز سے ہی وکٹیں گنوائیں۔ حضرت اللہ زازئی صفر سے پویلین واپس چلے گئے۔ لوگ توقع کر رہے تھے کہ وہ بہت زیادہ سکور کرے گا لیکن وہ اس میں بری طرح ناکام رہا! وہ صفر پر آؤٹ ہوئے، دوسری جانب کامران اکمل نے عمدہ اننگز کھیلی۔ وہ 24 گیندوں پر 41 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

پشاور زلمی کی جانب سے کوئی بھی بلے باز لمبی اننگز کھیلنے اور دوسرے ہاتھ سے وکٹ نہ بچا سکا۔ حیدر علی سب سے زیادہ سکور کرنے والے کھلاڑی رہے اور انہوں نے 49 رنز بنائے، وہ صرف 1 رن سے اپنی ففٹی سے چوک گئے۔ پشاور زلمی نے مقررہ 20 اوورز میں 9 وکٹوں کے نقصان پر 170 رنز بنائے۔ قلندرز نے یہ میچ 29 رنز سے جیت لیا۔

زمان خان نے پچھلے میچوں کے مقابلے میں واقعی اچھی بولنگ کی اور 32 رنز دے کر 3 وکٹیں حاصل کیں۔ لاہور قلندرز کو اپنی فیلڈنگ کو بھی بہتر کرنا ہوگا، انہوں نے گزشتہ روز زلمی کے خلاف 4 سے 5 کیچز گرائے تھے۔

ڈیوڈ ویز نے ہیٹرک کو مس کیا۔
ڈیوڈ ویز ایک ہیٹرک گیند پر تھے اور ابھی ہیٹرک مس کر رہے تھے، قلندر کے تمام کھلاڑی ان کے لیے محسوس کر رہے تھے اور ایسا لگ رہا تھا کہ وہ سب ہیٹرک سے محروم ہیں۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ قلندر ایک دوسرے سے کتنا پیار کرتے ہیں اور ایک دوسرے کا ساتھ دیتے ہیں۔ شائقین نے بھی اسے سراہا، شائقین کے مطابق اس نے تمام ٹیموں کے لیے ایک مثال قائم کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔