Categories
Uncategorized

ایوارڈ جیتنے کے بعد محمد رضوان کا ایسا بیان کے مسلمانوں کا سر فخر سے بلند ہو جائے!

محمد رضوان کو انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کا سال کا بہترین کھلاڑی قرار دیا ہے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ محمد رضوان یہ ایوارڈ جیتنے کے حقدار ہیں اور انہوں نے اس سال شاندار کھیل کا مظاہرہ کیا۔ زمرہ کے دیگر کھلاڑی سال 2021 میں محمد رضوان کے دکھائے گئے لیول کے قریب بھی نہیں تھے۔

گزشتہ سال دسمبر میں محمد رضوان کبھی بھی اننگز کا آغاز کرنے نہیں آئے تھے اور وائٹ بال کرکٹ میں مشکلات کا شکار تھے۔ ان کی اوسط صرف 17 ہے۔ رضوان نے یہ بھی بتایا کہ مصباح الحق ان کے کیریئر کا اہم موڑ تھے کیونکہ مصباح ہی وہ تھے جنہوں نے محمد رضوان کو ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں پاکستان کے لیے اننگز کا آغاز کرنے کا کہا تھا۔

اس سے پہلے محمد رضوان مڈل آرڈر میں کھیلتے تھے جہاں وہ کامیاب نہیں ہو رہے تھے اور بیک ٹو بیک ناکامیوں کا مشاہدہ کرتے تھے۔ لوگ محمد رضوان کو ٹرول اور تنقید کا نشانہ بنا رہے تھے۔ انہوں نے مصباح الحق کو بیک ٹو بیک چانس نہ دینے اور فخر زمان اور شجریل خان جیسے کھلاڑیوں کو اوپننگ کا موقع نہ دینے پر بھی تنقید کی۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی جانب سے 2021 میں ہونے والے کرکٹ ورلڈ کپ 2021 میں مصباح الحق اور محمد رضوان نے سب کو غلط ثابت کر دیا۔محمد رضوان نے شاندار بیٹنگ کی اور پاکستان کرکٹ ٹیم کو بھرپور سپورٹ کیا۔ انہوں نے میگا ایونٹ میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بابر اعظم کو سپورٹ کیا۔

آج جب انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے اعلان کیا کہ محمد رضوان نے ICC T20 پلیئر آف دی ایئر کا ایوارڈ جیت لیا ہے تو یہ پورے پاکستان اور خاص طور پر رضوان اور ان کے کوچز کے لیے اعزاز تھا۔

محمد رضوان نے گزشتہ سال آسٹریلیا کے خلاف تمام اہم سیمی فائنل بھی کھیلا تھا۔ اس وقت وہ بیمار تھے اور سانس بھی ٹھیک سے نہیں لے پا رہے تھے، گزشتہ 2 دنوں سے وہ آئی سی یو میں تھے اور ڈاکٹروں نے کہا تھا کہ رضوان نے ایسا کھیلا تو ان کا خطرہ ہوگا اور وہ دوبارہ اسپتال میں داخل ہوسکتے ہیں۔ ان سب کے باوجود محمد رضوان نے پاکستان کی نمائندگی کرنے کا انتخاب کیا اور سیمی فائنل میں آسٹریلیا کے خلاف کھیلا۔ اس نے اپنا سو فیصد دیا لیکن پاکستان ٹورنامنٹ کے فائنل کے لیے کوالیفائی نہیں کر سکا۔

محمد رضوان نے آئی سی سی ٹی 20 پلیئر آف دی ایئر کا ایوارڈ جیتنے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’’بس اللہ ہے –

رضوان نے مزید کہا کہ میں ہر اس شخص کا شکر گزار ہوں جنہوں نے مجھے سپورٹ کیا اور محبت کا اظہار کیا، انشاء اللہ ابھی سفر شروع ہوا ہے۔ انہوں نے اس ایوارڈ کو پاکستانی عوام کے نام وقف کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایوارڈ پاکستان اور پاکستان کے خوبصورت لوگوں کے لیے وقف ہے!

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین رمیز راجہ نے بھی محمد رضوان کو یہ ایوارڈ جیتنے پر اعزاز سے نوازا۔ چیئرمین رمیز راجہ نے محمد رضوان کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یہ محمد رضوان کے لیے ایک اچھی کامیابی ہے، انہوں نے کہا کہ رضوان کا کام اور رویہ ان کی تعریف کرتا ہے اور رمیز راجہ نے ان کے آنے والے مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

محمد رضوان کو ایوارڈ جیتنے پر بین الاقوامی اور قومی کرکٹرز نے تالیاں بجا کر مبارکباد دی۔ سری لنکن اوپنر نے محمد رضوان کو سراہا اور انہیں مبارکباد بھی دی۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے ابھی تک سال کے بہترین کھلاڑی، آئی سی سی ون ڈے اور ٹیسٹ پلیئر آف دی ایئر کا اعلان نہیں کیا ہے۔ ان میں سے دو کیٹیگریز میں پاکستانی کھلاڑی بھی نامزد ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔