Categories
Uncategorized

شعیب اختر باﺅنسرمار کے بلے باز کے پاس جا کرکان میں کیا کہتے تھے، یووراج سنگھ نے بھانڈا پھوڑ دیا

ٹویٹر پر ایک ؤیڈیو وایرل ہو رہی ہے جس میں میں جوفرا آرچر کا باﺅنسر سٹیو سمتھ کی گردن پر لگا اور وہ زمین بوس ہو گئے، تاہم جوفرا آرچر ان کے پاس جا کر خیریت دریافت کرنے کے بجائے واپس چلے گئے جس پر شعیب اختر نے انہیں تنقید کا نشانہ بنایا

شعیب اختر نے کہا کہ ”باﺅنسر گیم کا حصہ ہیں لیکن جب بھی کوئی باﺅلر کسی بلے باز کو سر پر باﺅنسر مارتا ہے اور وہ گر جاتا ہے تو اخلاقیات کا تقاضہ یہ ہے کہ باﺅلر بلے باز کے پاس جائے اور

اس کی خیریت دریافت کرے. میں ہمیشہ وہ پہلا شخص ہوا کرتا تھا جو ایسے موقع پر بلےباز کے پاس جایا کرتا تھا.“ یووراج سنگھ نے شعیب اختر کی اس ٹویٹ پر مزاح سے بھرپور جواب دیا،

یووراج سنگھ نے کہا کہ ”ہاں! آپ بلےباز کے پاس جاتے تھے لیکن آپ کے حقیقی الفاظ یہ ہوا کرتے تھے کہ امید ہے تم ٹھیک ہو گے میرے بھائی کیونکہ ابھی چند اور باﺅنسر بھی آنے والے ہیں.“

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔