Categories
Uncategorized

اگر آج میں ریٹائرمنٹ واپس لے لوں اور کل چیئرمین پی سی بی بول دیں کے ہم فکسرز کو نہیں کھلاتے تو۔۔محمد عامر نے ریٹائرمنٹ واپس لینے کے لئے شرط رکھ دی

قومی کرکٹ ٹیم کے فاسٹ بولر محمد عامر نے کہا ہے کہ جب تک ٹیم مینجمنٹ اُن سے رابطہ نہیں کرے گی تب تک وہ ٹیم میں واپسی نہیں کریں گے۔

ٹی 10 لیگ کے دوران محمد عامر نے ورچوئل پریس کانفرنس کی جس میں اُنہوں نے شائقین کرکٹ کے مختلف سوالات کے جواب دیے۔

پریس کانفرنس کے دوران ایک کرکٹ شائق نے محمد عامر سے اُن کی قومی ٹیم میں واپسی کے حوالے سے سوال کیا۔

 محمد عامر نے جواب میں کہا کہ ’پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین اور میجنمنٹ میرے ساتھ رابطے میں تھی لیکن نئے چیئرمین نے اب تک مجھ سے کسی قسم کا کوئی رابطہ نہیں کیا ہے۔‘

محمد عامر نے کہا کہ ’جب تک نئی ٹیم مینجمنٹ مجھ سے رابطہ نہیں کرے گی تب تک ریٹائرمنٹ کا فیصلہ واپس لینے کے بارے میں نہیں سوچوں گا۔‘

اُنہوں نے کہا کہ ’میں عزت کے ساتھ ٹیم میں واپسی چاہتا ہوں لہٰذا اگر مینجمنٹ نے مجھ سے رابطہ کیا تو میں ریٹائرمنٹ کا فیصلہ واپسی لینے کا سوچوں گا۔‘

محمد عامر نے مزید کہا کہ ’میں نہیں چاہتا کہ میں ریٹائرمنٹ کا فیصلہ واپس لے لوں اور ٹیم مینجمنٹ بولے کہ ہم آپ کو نہیں کِھلانا چاہتے لہٰذا عزت کے ساتھ ہی ٹیم میں واپس آؤں گا ورنہ نہیں۔‘

خیال رہے کہ گزشتہ سال محمد عامر نے مینجمنٹ سے مایوس ہو کر ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا تھا۔

فاسٹ بولر محمد عامر پاکستان کرکٹ ٹیم کی منیجمنٹ پر برس پڑے تھے اور انہوں نے کہا تھا کہ مجھے ذہنی طور پر ٹارچر کیا جارہا ہے۔

دوسری جانب پی سی بی نے عامر کے ریٹائرمنٹ کے فیصلے کو ذاتی فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ آئندہ کسی بھی انٹرنیشنل میچ کیلئے محمد عامر کے نام پر غور نہیں کیا جائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے