Categories
News

سمندری طوفان ‘شاہین’ کا خطرہ: سندھ میں اسکول ، کالج بند رہیں گے

سندھ کے وزیر تعلیم سردار شاہ نے کہا کہ محکمہ تعلیم نے آج (جمعہ) سندھ بھر کے تمام سرکاری اور نجی اسکول اور کالج بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ سائیکلون شاہین کے خطرے کے درمیان صوبے میں شدید بارشیں متوقع ہیں۔

دوسری جانب صوبائی وزیر بورڈز اور یونیورسٹیز اسماعیل راہو نے بھی کراچی سمیت سندھ کے متاثرہ اضلاع میں یونیورسٹیاں بند کرنے کا اعلان کیا۔

اسماعیل راہو نے کہا کہ سمندری طوفان شاہین کے خطرے اور صوبہ سندھ میں شدید بارشوں کی وجہ سے متاثرہ اضلاع میں یونیورسٹیاں بند کرنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں۔

اس دوران شہریوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ غیر ضروری طور پر اپنے گھروں سے باہر نہ نکلیں۔

دوسری جانب کمشنر کراچی نوید شیخ نے ساحلی علاقوں میں دفعہ 144 نافذ کر دی ، شہریوں کو سمندری طوفان شاہین کے خطرے کے درمیان سمندر میں نہانے سے روک دیا۔ انہوں نے شہریوں سے اپیل کی ہے کہ وہ سمندر میں جانے سے گریز کریں اور پابندی کی سختی سے پابندی کریں۔

اس حوالے سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق یہ پابندی محکمہ موسمیات کی جانب سے طوفان شاہین کی پیش گوئی کے پیش نظر لگائی گئی ہے۔ سمندری غسل پر پابندی 5 اکتوبر تک نافذ رہے گی۔

بحیرہ عرب میں سمندری طوفان شاہین کے خطرے کے بعد کمشنر کراچی نے ساحلی علاقوں میں دفعہ 144 نافذ کر دی اور سمندری غسل پر پابندی عائد کر دی۔ کمشنر نے متعلقہ اداروں کو دفعہ 144 کے فوری نفاذ کو یقینی بنانے کی ہدایت کی۔

دوسری جانب کمشنر کراچی نے شہر سے بل بورڈز ہٹانے کے احکامات کی بنیاد پر نوٹیفکیشن بھی جاری کیا۔ حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ شہر بھر کی تمام اونچی عمارتوں سے بل بورڈز اور ہورڈنگز ہٹائے جائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے