Categories
News

پٹرول کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف اپوزیشن کا پنجاب اسمبلی میں احتجاج-

جمعہ کو اپوزیشن جماعتوں نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف پنجاب اسمبلی میں احتجاج کیا۔اجلاس کے دوران اپوزیشن ارکان نے نعرے لگائے اور قیمتوں میں اضافے کا فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کیا۔

حکومتی ارکان نے بھی احتجاج کا جواب دیا اور پاکستان مسلم لیگ (ن) رانا مشہود کی تقریر کے دوران ‘چور ، چور’ کے نعرے لگائے۔

دریں اثناء پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما سید حسن مرتضیٰ نے بھی احتجاجا House ایوان سے واک آؤٹ کیا۔

تیل کی عالمی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کے بعد یکم اکتوبر (جمعہ) سے حکومت کی جانب سے پیٹرول کی قیمت میں 4 روپے فی لیٹر اضافے کے بعد یہ رد عمل سامنے آیا۔

یہ فیصلہ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کی سفارش کے مطابق کیا گیا ہے۔ پٹرول کی نئی قیمت 127.20 روپے فی لیٹر ہو گی جبکہ موجودہ قیمت 123.20 روپے فی لیٹر ہے۔

ہائی اسپیڈ ڈیزل (ایچ ایس ڈی) کی قیمتوں میں 2 روپے فی لیٹر اضافہ کیا گیا تھا اور اب اس کی قیمت 122.04 روپے فی لیٹر ہو گی۔ مٹی کے تیل کی قیمت بھی 7.02 روپے فی لیٹر بڑھ کر 99.31 روپے فی لیٹر ہوگئی جو کہ 92.29 روپے فی لیٹر تھی۔

اس کے علاوہ لائٹ ڈیزل آئل کی قیمت 8.82 روپے مزید ہوگی اور اس طرح اس کی قیمت 99.51 روپے فی لیٹر ہوگی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے