Categories
News

منی لانڈرنگ کے الزامات: برطانوی عدالت نے شہباز شریف ، خاندان کو بری کر دیا

لندن (دنیا نیوز) برطانیہ کی ایک عدالت نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف اور ان کے خاندان کو منی لانڈرنگ کے الزامات سے بری کر دیا۔

واضح رہے کہ دسمبر 2019 میں عدالتی حکم پر شہباز شریف اور سلیمان شہباز کے بینک اکاؤنٹس منجمد کر دیے گئے تھے۔ شہباز اور سلیمان کے بینک اکاونٹس اعلیٰ سطح کی تحقیقات کے تابع تھے۔ پاکستان کی جانب سے برطانوی حکومت سے لوٹی گئی رقم کی وصولی کی درخواست کے بعد اکاؤنٹس منجمد کر دیے گئے۔

برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی (این سی اے) نے شہباز شریف اور ان کے بیٹے سلیمان شہباز کے منجمد بینک اکاؤنٹس سے متعلق تحقیقاتی رپورٹ ویسٹ منسٹر کورٹ میں پیش کی۔

رپورٹ کے مطابق شہباز شریف اور ان کے خاندان کے بینک اکاؤنٹس میں منی لانڈرنگ ، کرپشن اور مجرمانہ سرگرمیوں کا کوئی ثبوت نہیں ملا۔ 21 ماہ کی تحقیقات میں 20 سال کے مالی معاملات کو دیکھا گیا۔

برطانوی ایجنسی نے حکومت پاکستان ، نیب اور ایسٹ ریکوری یونٹ کی درخواست پر تحقیقات شروع کی تھیں۔ تحقیقات کے دوران شہباز شریف اور ان کے خاندان کے برطانیہ اور متحدہ عرب امارات میں اکاؤنٹس کی چھان بین کی گئی۔

عدالت نے شہباز شریف اور ان کے خاندان کو منی لانڈرنگ اور مجرمانہ الزامات سے بری کر دیا اور مسلم لیگ (ن) کے صدر اور ان کے خاندان کے بینک اکاؤنٹس بحال کرنے کا حکم دیا۔

این سی اے نے سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور ان کے اہل خانہ کے منجمد بینک اکاؤنٹس بحال کردیئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے